پنجا ب میں نئے بلدیاتی نظام بارے مزید نکات، تجاویز سامنے آگئیں 1

پنجا ب میں نئے بلدیاتی نظام بارے مزید نکات، تجاویز سامنے آگئیں

پنجاب کے نئے بلدیاتی نظام میں 6 ادارے میئر کےماتحت رہیں گے ،6 اداروں سےمتعلق اختیارات میٹروپولیٹن کارپوریشن کےپاس ہوں گے ،،میٹروپولیٹن کارپوریشن ان اداروں سےکام لینے کی ذمہ دار ہوگی۔
نئے نظام کے تحت 35 ڈسٹرکٹ کونسلز کا قیام عمل میں لایا جائے گا، ہر ضلع میں ڈسڑکٹ لوکل گورنمنٹ اتھارٹی بھی قائم کی جائے گی۔ چیئرمین ضلع کونسل ڈسٹرکٹ لوکل گورنمنٹ اتھارٹی کا چیئرپرسن ہوگا۔ ٹریڈرز کے لیے ایک مخصوص نشست مختص کرنے کی تجویز کا جائزہ لیا جائے گا۔

نئے بلدیاتی نظام میں وزیراعلیٰ پنجاب کے اختیارات کا بھی تعین کردیا گیا۔وزیراعلیٰ پنجاب کے پاس 8نکاتی اختیارات ہوں گے جبکہ نئےنظام میں خواتین، بزرگ، نوجوان اور مخصوص نشستوں پر تاجر بھی شامل ہوں گے۔

ایک کروڑ سے زائد والے شہر میں بلدیاتی نمائندوں کی تعداد 71ہوگی۔ ایک میئر، 2 اقلیتی نشستیں، 10 خواتین، 8 ورکرز کی نشستیں ہوں گی، 2بزرگ، 3 نوجوان اور45 جنرل کونسلر کی نشستیں ہوں گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں