Hamza Shahbaz released from jail

حمزہ شہباز20ماہ بعد جیل سےرہا، کارکنوں کا جشن

لاہور:(نمائندہ تیزخبرنیوز) پنجاب میں اپوزیشن لیڈر اور ن لیگ کے سینئر رہنما حمزہ شہباز تقریباً 20 ماہ کی جیل کاٹنے کے بعد آج کوٹ لکھپت جیل سے رہا ہوگئے۔ احتساب عدالت کے جج اکمل خان نے حمزہ شہباز کی رہائی کی روبکار پر دستخط کئے تھے۔ لیگی رہنما کے استقبال کی تیاریاں مکمل کرلی گئیں۔نائب صدر ن لیگ مریم نواز چچا زاد بھائی کی جیل سے رہائی کے موقع پر استقبال کیلئے کوٹ لکھپت جیل پہنچ گئی ہیں۔

ن لیگ نے حمزہ شہباز کے بھرپور استقبال کی تیاری کو حتمی شکل دے دی ہے۔صوبائی اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز کی کوٹ لکھپت جیل سے رہائی کے موقع پر مریم نواز نے خود استقبال کیا۔پارٹی ورکرز کے حمزہ شہباز کے حق میں نعرے، استقبال کیلئے لاہور میں12مقامات پرکیمپ لگائے گئے ہیں۔

مسلم لیگی رہنمائوں کی بڑی تعداد استقبالیہ کیمپ پہنچ گئی۔ استقبال کرنے والوں میں خواجہ عمران نذیر، سید توصیف شاہ، رانا آختر ،حاجی خنیف ،شائشتہ پرویز ملک ،علی پرویز ،عاشقِ رسول ﷺ رانا اکبر سلیم سینئر رہنما پاکستان مسلم لیگ ن ، میاں طارق ، حافظ نعمان ، شہزاد خان، میان ندیم ،بلال بٹ ،سید توقیر شاہ ، عبد المجید چن، طلحہ برکی ، عمران گورائیہ، ملک ریاض، شہزاد انور ، مسز نسرین ملک  اور میان مجتبی شجاع الرحمان شامل ہیں۔

حمزہ شہباز20ماہ بعد جیل سےرہا، کارکنوں کا جشن 1

پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز کی جیل سے رہائی کے موقع پر مریم نواز نے حمزہ شہباز کا جیل میں استقبال کیا اور سلفیاں بنا کر شوسل میڈیا پر وائرل کر دیں۔ مریم نواز نے حمزہ شہباز کی جیل سے رہائی کے موقع خود وہاں موجود رہیں اور حمزہ شہباز کا استقبال کیا پہلے تو گلہ لگا کر چھوٹے بھائی کے حوصلہ بلند کیا تو بعد بھی گاڑی میں ساتھ  بیٹھتے ہی حمزہ کے ساتھ خوشگوار مسکراہٹ کے ساتھ سیلفی بنا کر سوشل میڈیا پر وائرل کر دی، مریم نواز نے ٹویٹ کیا کہ شکرالحمداللہ!

حمزہ شہباز20ماہ بعد جیل سےرہا، کارکنوں کا جشن 2

ذرائع کا کہنا ہے کہ حمزہ شہباز براستہ کچا جیل روڈ ماڈل ٹاؤن رہائش گاہ جائیں گے، ان کا مختلف استقبالی کیمپس کے ذریعے بھرپور استقبال کیا جائے گا اور وہ ایک ریلی کی صورت میں جیل سے رہائش گاہ جائیں گے۔

  (ن) لیگی ذرائع کا کہنا ہے کہ حمزہ شہباز کی ضمانت پر رہائی سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کا تحریری فیصلہ متعلقہ احتساب عدالت میں پہنچ چکا تھا جبکہ ان کے ضمانتی مچلکے بھی احتساب عدالت میں پہنچ چکے تھے، مچلکوں کی سکروٹنی کا کام بھی مکمل کر لیا گیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں