کابل ایئرپورٹ چھوڑتے ہوئے امریکی فوج کی عجیب و غریب حرکت 1

کابل ایئرپورٹ چھوڑتے ہوئے امریکی فوج کی عجیب و غریب حرکت

واشنگٹن: امریکی فوج کابل ایئر پورٹ چھوڑنے سے قبل وہاں موجود اپنے طیارے اور اسلحے کو ناکارہ بناگئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز کابل ایئر پورٹ چھوڑنے سے قبل امریکی فوجی دستوں نے اپنے قیمتی ساز و سامان کو ناقابل استعمال بنایا، جس میں طیارے، گاڑیاں اور اسلحہ شامل تھا۔

رپورٹ کے مطابق امریکی فوجی دستوں نے 73 طیاروں اور 70 بکتر بند گاڑیوں (MRAP) کو ناکارہ بنایا، امریکی فوجی حکام کے مطابق ناکارہ بنائے گئے طیارے کبھی اڑ نہیں سکیں گے، نہ انھیں کوئی استعمال کر سکے گا۔ حکام کا کہنا ہے کہ جو گاڑیاں ناکارہ بنائی گئی ہیں ان میں سے ہر ایک کی قیمت ایک ملین ڈالر کے لگ بھگ تھی
کابل ایئرپورٹ چھوڑتے ہوئے امریکی فوج کی عجیب و غریب حرکت 2

امریکا نے ایئر پورٹ پر نصب ایئر ڈیفنس سسٹم کو بھی ناکارہ بنا دیا ہے، اس دفاعی نظام نے گزشتہ روز کابل ایئر پورٹ پر فائر کیے گئے راکٹوں کو تباہ کیا تھا۔

افغانستان سے 20سال بعد امریکی فوج واپس چلی گئی

یاد رہے کہ ایک ہفتہ قبل پینٹاگون نے تصدیق کی تھی کہ کابل کے حامد کرزئی بین الاقوامی ہوائی اڈے پر امریکی افواج کسی بھی ہتھیار اور دیگر سازوسامان کو تباہ کر سکتی ہیں جو وہ انخلا کے اختتام تک اپنے ساتھ نہیں لے جا سکیں گی۔

واضح رہے کہ افغانستان میں گزشتہ 20 سال سے موجود امریکی افواج بالآخر آج واپس چلی گئیں، ساتھ ہی امریکی صدر جو بائیڈن نے افغانستان میں جنگ کے خاتمے کا بھی باضابطہ اعلان کیا، انھوں نے کہا ایک لاکھ 20 ہزار سے زائد امریکی، اتحادیوں اور افغانوں کا انخلا کیا گیا ہے، امریکی صدر کے مطابق یہ امریکی تاریخ کا سب سے بڑا فضائی انخلا تھا۔

امریکی سینٹرل کمانڈ کے سربراہ جنرل فرینک مک کینزی کے مطابق کابل ایئر پورٹ سے آخری امریکی طیارے امریکی وقت پیر کی دوپہر تین بج کر 29 منٹ (کابل میں رات 12 بجے سے ایک منٹ پہلے) پر اڑے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں