maryam-nawazs-corona-test-positive

’آج جج، میڈیا اور الیکشن کمیشن بھی بول رہے ہیں، یہ زبان انہیں نوازشریف نے دی‘

لاہور: مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہےکہ آج جب بیانیہ ملا تو جج ، میڈیا اور الیکشن کمیشن بھی بول رہا ہے، یہ زبان ان کو میاں نوازشریف نے دی۔

لاہور میں پارٹی اجلاس سے خطاب میں مریم نواز نے کہاکہ کوئی ایسا شخص موجود نہیں جو ووٹ کی حرمت اور آئین کی بالادستی پر یقین نہ رکھتا ہو، نوازشریف نے ووٹ کی عزت مانگی آج وہ سرخرو ہوئے ہیں، 74 سال سے کسی کے پاس بیانیہ نہیں تھا اور آج جب بیانیہ ملا تو جج، میڈیا اور الیکشن کمیشن بھی بول رہا ہے، یہ زبان ان کو میاں نوازشریف نے دی۔

انہوں نے کہا کہ اگلے الیکشن میں پی ٹی آئی کو امیدوار نہیں ملیں گے کیونکہ لوگ خدمت کو یاد کرتے ہیں تو انہیں مسلم لیگ (ن) یاد آتی ہے، کوڑے کے ڈھیر لگے دیکھ کر لوگوں کو شہبازشریف یاد آتا ہے۔

لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ (ن) لیگ پہلے سے زیادہ مضبوط ہے، پی ٹی آئی کسی ایم این اے اور ایم پی اے کو توڑ نہیں سکی جب کہ عمران خان امریکا اس لیے نہیں گیا اس کو ملنے اور تسلیم کرنے کو کوئی تیار نہیں۔

مریم نواز نے مزید کہا کہ یہ جو ایک پیج کی بات کرتے ہیں وہ بھی ناکام ہوا، کہاں ہیں وہ جو کہتے تھے نوازشریف ختم ہوگیا، آج بھی ان کے دن کا آغاز نوازشریف سے ہوتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ شہبازشریف آج انٹر نیشنل صادق و امین بن گئے ہیں، یہ پروپیگنڈا ہمیشہ کیا گیا کہ سیاستدان کرپشن کرتے ہیں اور (ن) لیگ کو بھی اسی پروپیگنڈے کا سامنا کرنا پڑا، یہ سرٹیفکیٹ مسلم لیگ (ن) کو نہیں سب سیاسی جماعتوں کو ملا ہے۔

لیگی رہنما نے کہا کہ عمران خان ذہنی مریض بن چکے ہیں، جھوٹے مقدمات چلانے کے لیے ملک کے اربوں روپے لٹادیے گئے، واضح کہنا چاہتی ہوں یہ نہ پہلے مسلم لیگ (ن) کو توڑ سکے نہ اب توڑ سکیں گے۔

مریم نواز کا کہنا تھا کہ میاں صاحب نے اپنی تقریر میں کہا کہ انہوں نے لڑائی سے بچنے کی پوری کوشش کی اور میاں صاحب نے لڑائی سے بچنے کے لیے دیرینہ ساتھی پرویز رشید، مشاہد اللہ اور طارق فاطمی کی قربانیاں دیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں