the-saudi-government-clarified-about-hajj

سعودی حکومت نے حج سے متعلق وضاحت کردی

وفاقی وزیر مذہبی امور پیرنورالحق قادری نے کہا ہے کہ سعودی حکومت نے ابھی تک حج سے ‏متعلق حتمی پالیسی جاری نہیں کی۔

سعودی وزیر حج و عمرہ کا وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری سے ٹیلفونک رابطہ ہوا جس میں ‏حج 2021 کے آپریشن اور تیاریوں سے متعلق امور پر گفتگو ہوئی۔

ٹیلیفونک رابطے کے بعد وفاقی وزیر نے ویڈیو بیان جاری کرتے ہوئے واضح کیا کہ عازمین کی ‏تعداد اور ایس او پیز ابھی طے ہونا باقی ہیں، سعودی حکومت حتمی فیصلے سے قبل پاکستان کو ‏اعتماد میں لے گی سعودی حکومت کی جانب سے حتمی اعلان کے بعد حج پالیسی کا اعلان کیا ‏جائے گا۔

سعودی سفارتخانہ نے بیان جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ کتنے عازمین شریک ہوں گے،حج پالیسی کیا ‏ہوگی، فیصلہ ہوناہے، حج سےمتعلق کوئی سرکاری فیصلہ نہیں ہوا صرف مختلف تجاویز پر غور جاری ‏ہے۔

دوسری جانب حج2021 کے لیے سعودی وزارت صحت نے 9 صفحات پر مشتمل ہدایات نامہ جاری ‏کیا ہے۔ عازمین کو ویکسی نیشن کارڈ کے ساتھ انفرادی طور پر وزارت کو ثبوت دینا ہوگا۔

ہدایت نامہ کے مطابق سعودی وزارت صحت کےتسلیم اور منظور شدہ ویکسین لگوانا لازمی قرار ‏دیا گیا ہے، ویکسین کی پہلی خوراک یکم شوال 1442 کو لی گئی ہو اور ویکسین کی دوسری خوراک ‏سعودی عرب داخلے سے 14دن پہلے لینا ہو گی۔

غیرملکی زائرین کیلئےمملکت میں داخلے کے بعد 3 دن کا قرنطینہ لازمی ہوگا۔ تمام تر احتیاطی ‏تدابیر اور ایس او پیز پر عملدرآمد کو یقینی بنانا ہوگا۔

حج مقامات پر پہنچنے سے قبل دستاویزات بشمول میڈیکل سرٹیفکیٹ مکمل کرنے ہوں گے۔ ‏ویکسین سند /دستاویز لازمی موجود ہو اور کورونا کیلئےاسکریننگ کرانی ہو گی۔ سوشل میڈیا، ‏ٹورایجنسیوں کو ایس ایم ایس سے معلومات کی فراہمی جاری رہےگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں