sipri-pakistan-is-one-of-largest-buyers-of-armsv

کیا پاکستان ہتھیاروں کے بڑے خریداروں میں شامل ہو گیا؟

سویڈن: ایک بین الاقوامی ریسرچ انسٹی ٹیوٹ نے کہا ہے کہ پاکستان ہتھیاروں کے سب سے بڑے درآمد کنندگان میں شامل ہو گیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق اسٹاک ہوم انٹرنیشنل پیس ریسرچ انسٹیٹیوٹ (SIPRI) نے ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ سال 2016 سے 2020 تک پاکستان ایشیا پیسیفک خطے میں بھاری ہتھیاروں کے بڑے درآمد کنندگان میں شامل تھا۔

سِپری رپورٹ کے مطابق سال 2016 سے 2020 کے دوران ہتھیاروں کی بین الاقوامی تجارت میں اضافے کا رجحان نہیں دیکھا گیا، تاہم امریکا، فرانس اور جرمنی نے ہتھیاروں کی برآمد میں اضافہ کیا۔

دوسری طرف اس مدت کے دوران روس اور چین کی جانب سے ہتھیاروں کی بین الاقوامی فروخت میں کمی آئی۔

اس رپورٹ کے مطابق گزشتہ پانچ برسوں میں بھارت، آسٹریلیا، چین، جنوبی کوریا اور پاکستان ایشیا پیسیفک خطے میں ہتھیاروں کے سب سے بڑے درآمد کنندگان رہے۔

چین جو کہ سال 20-2016 کے درمیان دنیا میں بھاری ہتھیاروں کا پانچواں سب سے بڑا برآمد کنندہ تھا، اس کی برآمدات سال 15-2011 سے سال 21-2016 کے درمیان 7.8 فی صد کم رہیں۔

گزشتہ پانچ برسوں میں ہتھیاروں کی مجموعی برآمدات میں چین کی برآمدات 5.2 فی صد تھیں، جب کہ پاکستان، بنگلہ دیش اور الجیریا چین سے سب سے زیادہ ہتھیار لینے والے ممالک رہے۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ پانچ برسوں کے دوران دنیا میں بھاری ہتھیاروں کی فراہمی میں واضح کمی آئی، جس میں ایک دہائی سے زائد عرصے سے مسلسل اضافہ جاری تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں