وفاقی حکومت کا صدرِ مملکت سے اختیار واپس لینے کا فیصلہ 1

وفاقی حکومت کا صدرِ مملکت سے اختیار واپس لینے کا فیصلہ

اسلام آباد: وفاقی حکومت نے تیسرے نیب آرڈیننس میں صدر مملکت کو دیے جانے والا اختیار واپس لینے کا فیصلہ کرلیا۔

وفاقی حکومت نے قومی احتساب بیورو (نیب) چیئرمین کو ہٹانے کا اختیار صدر مملکت سےواپس لینے کا فیصلہ کیا ہے۔

وفاقی حکومت نے بذریعہ پارلیمنٹ صدر سے یہ اختیار واپس لینے کی تیاری شروع کردی ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ دنوں جاری ہونے والے نیب کے تیسرے ترمیمی آرڈیننس میں چیئرمین نیب کو عہدے سے ہٹانے کا اختیار صدر مملکت کو دیا گیا تھا۔

نیب کے تیسرے ترمیمی آرڈیننس کی روشنی میں قومی احتساب بیورو کے چیئرمین کی تقرری کا عمل نومبر سے دوسرے ہفتے سے شروع ہونے کا امکان بھی ہے، نئے سربراہ کے حتمی فیصلے تک پرانے چیئرمین ہی ذمہ داریاں انجام دیں گے۔

قبل ازیں یہ اطلاع سامنے آئی تھی کہ صدر مملکت نے نئے چییئرمین کی تقرری کے لیے وزیراعظم سے بذریعہ خط نام طلب کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ صدر مملکت وزیراعظم سے موصول ہونے والے نام قائد حزب اختلاف کوبھیجیں گے، ناموں پر اتفاق نہ ہوا تو تعیناتی کا معاملہ پارلیمانی کمیٹی کرے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں