مسلم لیگ ن کا حکومتی قانون سازی کو چیلنج کرنے کا فیصلہ 1

مسلم لیگ ن کا حکومتی قانون سازی کو چیلنج کرنے کا فیصلہ

لاہور : مسلم لیگ ن نے حکومتی قانون سازی کو چیلنج کرنے کا فیصلہ کرلیا ، اپوزیشن لیڈر شہبازشریف کا کہنا ہے کہ فرمان عمران نیازی مسترد کرتے ہیں، ملک میں بادشاہت قائم نہیں ہونے دیں گے۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے پارلیمانی ایڈوائزری بورڈ کا اہم اجلاس ہوا ، قائد حزب اختلاف شہبازشریف نے اجلاس کی صدارت کی ، جس میں مشترکہ اجلاس میں حکومت کے قانون سازی بلڈوز کرنے کے معاملے پر غور کیا گیا۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ پارلیمنٹ کے اندر اور باہر حکومت کی آئین دشمنی کو چیلنج کریں گے۔

اجلاس میں متحدہ اپوزیشن کے حکومتی قانون سازی عدالت میں چیلنج کرنے پر بریفنگ دی گئی اور اظہار مذمت کرتے ہوئے کہا گیا کہ تاریخ میں پہلی بار انتخابی اصلاحات بغیراتفاق رائےہوئیں۔

اپوزیشن لیڈر شہبازشریف نے کہا آئین حکومتی قانون سازی کوقانونی نہیں مانتا، فرمان عمران نیازی مسترد کرتے ہیں، مہنگائی کی بمباری کرنے والی حکومت نے پارلیمنٹ پرخود کش حملہ کیا ، حکومت عوام کے سامنے رسوا ہوچکی ، اب آئین پر حملہ آور ہے۔

شہبازشریف کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن کا بیان حکومتی قانون سازی ، ای وی ایم کےغلط ہونےکا ثبوت ہے، عمران نیازی کی پاکستان میں بادشاہت قائم نہیں ہونے دیں گے۔

اپوزیشن لیڈر نے مزید کہا کہ ایل پی جی، آٹا، چینی، دوائی، بجلی گیس عوام کی پہنچ سے باہر ہیں، حکومت غریبوں کے زخموں پر نمک چھڑک رہی ہے، اپوزیشن اتحاد ، جذبے کو سراہتا ہوں، جدوجہد رنگ لائے گی۔

شہبازشریف نے کا کہنا تھا کہ اپوزیشن اتحاد آئین اور عوام کو ریلیف دلائے گا، ظالم ، عوام دشمن ،قانون شکن حکومت کا ساتھ دینے والے عوام کے مجرم ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں