na-75-daska-by-polls-all-unofficial-results-upd

این اے 75 ڈسکہ کے ضمنی الیکشن میں ن لیگ کی نوشین افتخار نے میدان مارلیا

ن لیگ کی امیدوار نوشین افتخار نے مدمقابل تحریک انصاف کے امیدوار اسجد ملہی پر 19 ہزار 201 ووٹوں کی سبقت حاصل کی

ڈسکہ : پاکستان مسلم لیگ ن نے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 75 ضمنی انتخابات میں میدان مار لیا، فتح کے بعد لیگی کارکنان نے جشن منایا جبکہ قیادت نے امیدوار نوشین افتخار کو کامیابی پر مبارک باد بھی دی۔

تازہ ترین اطلاعات  کے مطابق ضمنی انتخاب کے غیر سرکاری اور غیر حتمی نتیجہ سامنے آگیا  اور  سب سے پہلےنتیجہ نشر کرنے کی روایت حسب سابق تیزخبر نیوز  نے برقرار  رکھی ہے۔

تمام360پولنگ اسٹیشنز کےغیرحتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق ن لیگ کی نوشین افتخار ایک لاکھ 11ہزار 220ووٹ لے کر کامیاب قرار پائی ہیں جبکہ پی ٹی آئی کے علی اسجد ملہی92019ووٹ لے کر پیچھے رہے، مسلم لیگ ن کو پی ٹی آئی پر19201ووٹوں کی برتری حاصل ہوئی۔

حلقے میں پولنگ کا آغاز صبح 8 بجے ہوا اور پولنگ کا عمل شام 5 بجے تک بغیر وقفے کے جاری رہا۔ دونوں امیدواروں کے درمیان کانٹے کا مقابلہ دیکھا گیا پولنگ ختم ہونے کے بعد ووٹوں کی گنتی کی گئی اس موقع پر  دونوں امیدواروں کے ووٹروں میں بھی کافی گہما گہمی دکھائی دی۔

حلقے میں سیکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کئے گئےتھے، 40 پولنگ اسٹیشنوں کو حساس قرار دیا گیا تھا، پولیس کے ساتھ رینجرز اہلکاروں کو بھی تعینات کیے گئے تھے۔

حلقے میں کل ووٹرز کی تعداد4 لاکھ 94ہزار ہے جن کے لیے 360 پولنگ اسٹیشنز قائم کیے گئے تھے جب کہ الیکشن میں سکیورٹی کے لیے پولیس کے 4100 سے زائد اور رینجرز کے ایک ہزار سے زائد اہلکار تعینات کیے گئے، اس کے علاوہ پاک فوج کی 10 ٹیمیں کوئیک رسپانس فورس کےطورپرموجود رہیں۔

قبل ازیں تمام تر حفاظتی انتظامات کے باوجود گورنمنٹ کالج برائے خواتین کے پولنگ اسٹیشن اور گوئند پولنگ اسٹیشن پر ن لیگی اور پی ٹی آئی کے کارکنان آمنے سامنےآگئے، حلقے میں اسلحہ کی نمائش کرنے پر پولیس نے نو مسلح افراد کوحراست میں لے لیا۔

اس سے قبل الیکشن کمیشن نے ن لیگ کے ایم پی اے ذیشان رفیق کو ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پرنوٹس جاری کیا تھا۔ ایم پی اے ذیشان رفیق پولنگ کے وقت اس علاقے کے دورے پر آئے تھے جو کہ غیر قانونی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں