asking for NRO

عمران خان دو دن سے ہاتھ جوڑ کر این آر او مانگ رہے ہیں، مریم نواز شریف

لاہور: مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز شریف نے کہا ہے کہ ارکان پارلیمنٹ کو استعفوں کیلئے ابھی باقاعدہ طور پر نہیں کہا گیا ہے۔ عمران خان دو دن سے ہاتھ جوڑ کر این آر او مانگ رہے ہیں۔ حکومت جلد ہی انجام کو پہنچے گی۔

تفصیل کے مطابق 13 دسمبر کو مینار پاکستان پر جلسے کا ماحول بنانے کیلئے مسلم لیگ (ن) متحرک ہو گئی ہے۔ مریم نواز نے گجومتہ سے داتا دربار تک ریلی کی قیادت کی اور مختلف مقامات پر خطاب کرتے ہوئے داتا دربار کے مزار پر حاضری دی۔

لاہوری گیٹ کے باہر جلسے سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ڈھائی سال میں روٹی، بجلی، گیس اور ادویات مہنگی ہو گئی ہیں۔ یہ حکومت لاہورنے نہیں بنائی مسلط کی گئی، لاہور حکومتیں بناتا اور گراتا بھی ہے، اس حکومت کو لاہور گرانے جا رہا ہے۔

مریم نواز کا کہنا تھا کہ خود آپ کو دعوت دینے آئی ہوں۔ میاں صاحب نے کہا خود جا کر لاہوریوں کو دعوت دینا۔ لاہور میں پی ڈی ایم کا آخری جلسہ ہے۔ لاہور جب بولتا ہے تو پاکستان بولتا ہے۔ 13 دسمبر کو مینار پاکستان میں لاہور بولے گا۔ دو دن میں لاہور والوں کا جذبہ دیکھ لیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف آج بھی آپ کے حق کے لیے جدوجہد کر رہا ہے۔ مسلم لیگ کو بدنام کرانے کے لیے حکمرانوں نے کوئی کسر نہیں چھوڑی۔ کبھی چور تو ڈاکو کبھی اور مودی کا یار کہا گیا۔ مریم نواز نے اپنے خطاب کے اختتام پر جلسے میں شریک لوگوں سے وعدہ لیا کہ چاہے آندھی آئے یا طوفان وہ 13 دسمبر کو مینار پاکستان جلسے میں پہنچیں۔

ریلی سے قبل جاتی امرا میں میڈیا نمائدوں سے گفتگو میں مریم نواز کا کہنا تھا کہ اس ملک کی خدمت (ن) لیگ نے کی اور وہی کرے گی، اس ملک میں مستقبل صرف (ن) لیگ کا ہی ہے۔ ڈی جے بٹ کی گرفتاری پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وہ پی ٹی آئی جلسوں میں خدمات دیتے رہے، ہم ان پر تشدد اور حراست کی مذمت کرتے ہیں۔ اب عمران خان کا مقابلہ نواز شریف نہیں بلکہ ڈی جے بٹ سے ہے۔ نواز شریف کا مقابلہ عمران خان نہیں بلکہ لانیوالوں سے ہے، یہ حکومت جلد انجام کو پہنچے گی۔

مریم نواز نے کہا کہ عمران خان پی ڈی ایم سے ہاتھ جوڑ کر این آر او مانگ رہے ہیں، (ن) لیگ نے باقاعدہ استعفوں کیلئے کسی کو نہیں کہا، (ن) لیگ 13 دسمبر کے بعد استعفے لے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں