Simple but fun rural life in Pakistan that everyone wants a few interesting highlightsSimple but fun rural life in Pakistan that everyone wants a few interesting highlights

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں

گلوبلائزیشن کے اثرات پنجاب کے دیہات پر بھی مرتب ہو رہے ہیں لیکن آج بھی دیہات کی زندگی میں وہ رعنائیاں ملتی ہیں، جو یہاں کی صدیوں پرانی ثقافت کی امین ہیں۔ دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی کی چند جھلکیاں۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 1

پنجاب میں لوک داستانیں ہوں یا محبت بھرے گیت۔ ان میں کنوؤں کا ذکر بھی ملتا ہے۔ پہلے کھیتوں کو سیراب کرنے کے لیے بیلوں کی مدد سے راہٹ چلتے تھے اب ان کی جگہ ٹیوب ویل لے چکے ہیں۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 2

بھٹی والی کا ذکر پنجاب کے لوک گیتیوں میں بھی کثرت سے ملتا ہے۔ مشہور پنجابی شاعر شیو کمار بٹالوی نے بھی اسی بھٹی والی سے کہا تھا، ’بھٹھی والیے ، چنبے دیئے ڈالیے، تینوں دیاں ہنجواں دا بھاڑا، نی پِیڑاں دا پراگا بُھن دے۔‘‘ جدیدیت کے ساتھ ساتھ پنجاب میں اب بھٹی والی خواتین بھی کم ہوتی جا رہی ہیں۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 3

جو شخص بھی کسی دیہات میں زندگی گزار چکا ہے، وہ اس بچے کی خوشی کو بخوبی سمجھ سکتا ہے۔ خوشیاں قیمتی کھلونوں کے بغیر بھی مل سکتی ہیں۔ اکثر دیہات میں ایسے بچے بھی نظر آتے ہیں، جو ٹائروں کو ایک چھوٹی چھڑی کی مدد سے گھوماتے ہوئے بھاگتے ہیں۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 4

دیہات کے حجام پہلے گھر گھر جا کر حجامت کیا کرتے تھے اور زمیندار لوگ انہیں فصل کی کٹائی کے بعد گندم یا چاول بطور معاوضہ دیا کرتے تھے۔ کئی دیہات میں اب بھی یہی رواج ہے۔ پنجاب کی ثقافت میں کبھی نائی کا کردار انتہائی اہم ہوتا تھا۔ شادی بیاہ کے لیے پیغامات یا دعوت نامے گاؤں کا حجام یا نائی ہی دینے جاتا تھا۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 5

جہاں شہروں کے بچے دودھ کے صرف نام سے واقف ہیں، وہاں دیہات کے بچے بھینسوں کی دیکھ بھال کرتے نظر آتے ہیں۔ زیر نظر تصویر میں بچے مٹکے نما اس برتن (دہونے) میں دودھ ڈال کر اپنے ڈیرے سے گھر لے جا رہے ہیں۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 6

حالیہ چند برسوں میں گدھے مہنگے ہو گئے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ جانوروں کے لیے چارے کی منتقلی کے لیے ماضی کی طرف دوبارہ بھینسوں کا استعمال بڑھ گیا ہے۔ بھینیسں گدے کی نسبت سست رفتار ہیں لیکن دیہات کے راستے بھی طویل نہیں ہیں۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 7

پنجاب کے دیہات میں بھیڑ بکریاں آج بھی بنیادی زندگی کا حصہ ہیں۔ کئی چرواہے سارا سال بھیڑ بکریاں پالتے رہتے ہیں اور عید الاضحیٰ کے موقع پر شہروں میں جا کر فروخت کر دیتے ہیں۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 8

پنجاب میں بہار کا موسم خوبصورت ترین موسم ہے۔ اس موسم میں شادیوں کی تقریبات میں بھی اضافہ ہو جاتا ہے۔ شادی کی تقریبات میں پھولوں کی مانگ کو پورا کرنے کے لیے یہی دیہات پیش پیش ہیں۔ نوشہرہ ورکاں کے مضافاتی دیہات میں پھولوں کا کاروبار عروج پکڑتا جا رہا ہے۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 9

اب تو شہروں میں بھی تندور کی روایت موجود ہے۔ لیکن کہا جاتا ہے کہ یہ پنجاب کے دیہات سے ہی چلی ہے۔ پنجاب کے زیادہ تر دیہات میں ایک تندور والی ہوتی تھی، جہاں سے روٹیاں لگوائی جا سکتی تھیں۔ پہلے معاوضے کے طور پر تندور والی کو آٹا دیا جاتا تھا اب لوگ پیسے بھی دیتے ہیں۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 10

آج کل پنجاب میں گنے کی فصل کاٹی جا رہی ہے۔ پاکستان میں گنا چینی بنانے کا ایک بنیادی ذریعہ ہے۔ دیہات میں گنے کے جوس (رَو) سے کھیر بھی تیار کی جاتی ہے اور چینی کا متبادل گُڑ بھی۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 11

گڑ بنانے کے لیے گنے کے رس کو ایک بڑے سے برتن میں ڈال کر گرم کیا جاتا ہے۔ پنجاب کے کئی دیہاتوں میں اب بھی لوگ چینی کی بجائے گڑ یا شکر کے استعمال کو ہی ترجیح دیتے ہیں۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 12

گڑ کا رنگ ہلکا براؤن بنانے کے لیے آج کل اس کی تیاری میں کیمیکلز کا استعمال بھی ہونا شروع ہو چکا ہے۔ مارکیٹ میں بیچے جانے والے گڑ میں تو کیمیکلز کا استعمال ہوتا ہے لیکن اکثر کسان اپنے گھر کے لیے استعمال ہونے والے گڑ میں یہ کیمیکلز نہیں ڈالتے۔ جس گڑ میں کیمکلز کا استعمال نہ ہو، اس کا رنگ گہرا براؤن ہو جاتا ہے۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 13

دیہات میں چھتیں جس قدر ایک دوسرے سے جڑی ہوتی ہیں، اسی طرح وہاں کے لوگوں کے دل بھی ایک دوسرے سے جڑے ہوتے ہیں۔ کچی چھتوں اور کچے صحنوں کی لپائی مٹی سے کی جاتی ہے۔ شہتیروں والی کچی چھتوں میں چڑیوں کو گھونسلے بنانے میں بھی آسانی ہوتی تھی۔ شہروں کی طرح گاؤں میں چھتیں پختہ ہوئیں تو تو چڑیاں بھی روٹھ گئی ہیں۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 14

ویسے تو پنجاب کے متعدد کھیل وقت کے ساتھ ساتھ ختم ہوتے جا رہے ہیں۔ اب ایسا کم ہوتا ہے کہ دیہات میں بچے بارہ ٹین، کوکلا چھپاکی، اسٹاپو، گُلی ڈنڈا یا پھر بندر کِلا کھیلتے نظر آئیں۔ تاہم کبھی کبھار بچے کینچے کھیلتے ہوئے نظر ضرور آتے ہیں۔ کبڈی کا کھیل بھی دوبارہ زندہ ہوتا نظر آتا ہے۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 15

ہر جگہ سوئی گیس نہیں ہے۔ دیہاتوں میں اب بھی آگ جلانے کے لیے گائے بھینسوں کے گوبر سے اوپلے بنائے جاتے ہیں، جنہیں سوکھ جانے کے بعد آگ جلانے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 16

پہلے پنجاب کے زیادہ تر گھروں میں اس طرح کی شیلف، جو پنجابی میں پڑچھتی کہلاتی ہے، ایک لازمی حصہ ہوتی تھی۔ اب ان پر پیتل کی بجائے کم قیمت دھاتوں کے برتن رکھے نظر آتے ہیں۔ کمروں کے اندر ایسی پڑچھتیاں بنانے کا رجحان تیزی سے کم ہوتا جا رہا ہے۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 17

پہلے چولہے کے ساتھ ساتھ تندور بھی ہر گھر کا لازمی حصہ ہوتا تھا۔ یہ رواج بھی عام تھا کہ کسی ایک گھر تندور جلایا جاتا تھا اور باقی خواتین وہاں آ کر اپنی روٹیاں لگاتی تھیں تاکہ ایندھن اور محنت کی بچت ہو۔ اب دیہات میں قدرتی گیس کی فراہمی سے روایتی تندور بھی کم ہوتے جا رہے ہیں۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 18

تانگہ پنجاب کی قدیم سواری ہے۔ کبھی مشہور گلوکار مسعود رانا کا گانا ’ٹانگے والا خیر منگدا، ٹانگہ لاہور ہووے تے پاویں جهنگ دا‘ پنجاب کے ہر دیہات میں مشہور تھا۔ اب دیہات میں بھی تانگے کی جگہ، بسیں، ویگنیں اور چنگ چی لے رہے ہیں۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 19

تیس برس پہلے تک پنجاب میں جگہ جگہ چھوٹے تالاب اور صاف بہتے پانی کے ایسے نالے ہوتے تھے، جہاں سے مقامی لوگ مچھلیاں پکڑتے تھے۔ اب ایسے تالاب اور نالے نہ ہونے کے برابر ہیں۔ فصلوں میں استعمال ہونے والی زہریلی ادویات کی وجہ سے مچھلیاں بھی ختم ہوتی جا رہی ہیں۔ 

پاکستان میں دیہات کی سادہ مگر پرلطف زندگی جس کی خواہش ہر کسی کو٬ چند دلچسپ جھلکیاں 20

شہروں کے برعکس دیہات میں سورج ڈھلتے ہی کاروبار زندگی بند ہو جاتا ہے۔ چرواہوں کی بھی کوشش ہوتی ہے کہ وہ سورج ڈھلنے سے پہلے پہلے ہی اپنی منزل مقصود پر پہنچ جائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں