کرونا وائرس ایک حیاتیاتی ہتھیار؟ امریکی خفیہ ایجنسیوں کی رپورٹ سامنے آ گئی 1

کرونا وائرس ایک حیاتیاتی ہتھیار؟ امریکی خفیہ ایجنسیوں کی رپورٹ سامنے آ گئی

واشنگٹن: کرونا وائرس کے بائیولوجیکل ہتھیار ہونے کے حوالے سے امریکی خفیہ ایجنسیوں‌ کی رپورٹ منظر عام پر آ گئی۔

تفصیلات کے مطابق امریکا نے کہا ہے کہ کرونا وائرس کو بائیولوجیکل ہتھیار کے طور پر استعمال کرنے کا امکان انتہائی معدوم ہے، امریکی انٹیلیجنس کمیونٹی کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس کو کسی بائیولوجیکل ویپن کے طور پر استعمال کرنے کا امکان نہیں ہے۔

امریکی خفیہ ایجنسیوں نے کرونا وائرس کے ماخذ کے حوالے سے 90 روزہ تحقیقات کے بعد ایک رپورٹ مرتب کر کے امریکی صدر جو بائیڈن کو پیش کر دی ہے، اس تفتیشی رپورٹ کے ایک حصے کو رائے عامہ کے سامنے لایا گیا ہے۔

امریکی انٹیلیجنس کمیونٹی کی 18 تنظیموں نے تحقیقات سے یہ اخذ کیا کہ یہ وائرس نومبر 2019 کے بعد ابھر کر سامنے آیا ہے، اسے حیاتیاتی ہتھیار کے طور پر تیار نہیں کیا گیا تھا، اور چینی حکام ابتدائی وبا سے پہلے اس کے بارے میں نہیں جانتے تھے۔

دوسری جانب امریکی صدر جو بائیڈن نے ایک بیان میں کہا تھا کہ امریکا میں لاکھوں انسانوں کی زندگیوں کے ضائع ہونے کا موجب بننے والی کرونا وبا کی جڑوں کی تلاش تک ہم چین کی نیند نہیں سوئیں گے۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں